Gujranwala Train Accident Killed 12 People





Gujranwala Accident Killed 12 People including Pak Army Colonel

According to Pakistan railways and DG ISPR Asim Bajwa 4 bogies of special train carrying militry troops to Kharian fell over bridge near Jamke Chattha in Canal. Rescue underway.Casualties expected,Initial investigation,Railway Bridge collapsed.shaheed confirmed 12 including Comd of unit,Lt.col Amir.8 bodies found.Rescue contnues.

گوجرانوالہ: پاک فوج کے دستے کو پنوعاقل سے کھاریاں لے کر جانے والی ٹرین کی 4 بوگیاں ہیڈ چناواں کے قریب پل ٹوٹنے کے باعث نہر میں جاگریں جس کے نتیجے میں یونٹ کمانڈر لیفٹیننٹ کرنل عامر جدون سمیت 12 افراد جاں بحق اور متعدد زخمی ہوگئے۔ 

ایکسپریس نیوزکے مطابق مال بردار ٹرین پنوعاقل سے کھاریاں جارہی تھی جس میں 4 مسافر بوگیاں بھی لگائی گئی تھیں جو ہیڈ چناواں کے قریب پل ٹوٹنے کے باعث نہر میں جاگریں جس کے نتیجے میں متعدد افراد ڈوب گئے۔ حادثے کے فوری بعد ریسکیو ٹیمیں اور مقامی افراد جائے وقوعہ پہنچ گئے جنہوں ریسکیو آپریشن شروع کردیا جب کہ نہر سے اب تک 8 افراد کی لاشیں نکال لی گئی ہیں۔ ترجمان پاک فوج کے مطابق خصوصی ٹرین کے ذریعے فوجی دستے کھاریاں جارہے تھے تاہم مال گاڑی میں لگی 4 بوگیاں جامکے چھٹا کے مقام پر نہرمیں جاگریں جس کے نتیجے میں یونٹ کمانڈر لیفٹیننٹ کرنل عامرجدون سمیت 12 افراد جاں بحق ہوگئے جب کہ نہر سے 8 لاشیں نکالی جاچکی ہیں۔ ترجمان کاکہنا ہے کہ ابتدائی تحقیقات کے مطابق حادثے کی وجہ پل کا ٹوٹنا تھا جب کہ نہرمیں ڈوبنے والے مزید مسافروں کو نکالنے کے لئے ریسکیو آپریشن جاری ہے۔

پاک فوج کے اہلکاروں کے پہنچنے کے بعد جائے وقوعہ سے عام افراد کو ہٹادیا گیا اور امدادی کاموں کو تیز کرنے کے لئے نہر کا پانی بھی روک لیا گیا ہے جس کے بعد بوگیوں میں پھنسے افراد کو نکالنے کے لئے بھاری مشینری کی مدد سے بوگیوں کو کاٹا جارہا ہے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ تینوں بوگیوں میں 200 افراد سوارتھے جن میں سے 85 افراد کو نکال لیا گیا ہے۔ وزیرریلوے خواجہ سعد رفیق کا کہنا ہے کہ حادثے کے متاثرہ تمام مسافروں کو نکال لیا گیا ہے تاہم 6 مسافراب بھی لاپتہ ہیں جنہیں نکالنے کے لئے ریسکیو آپریشن جاری ہے۔ انہوں نے کہا کہ ٹرین حادثے میں دہشت گردی کے امکان کو رد نہیں کیا جاسکتا تاہم پل کی خستہ حالی کوئی ایشو نہیں، حادثے سے تقریباً  ڈیڑھ گھنٹے قبل پاکستان ایکسپریس اسی پل سے گزری تھی جب کہ پاکستان ریلوے کے انجینئرز بہتراندازمیں بتا سکتے ہیں کہ ٹریک کی حالت کیا تھی اوراس حوالے سے تحقیقات کے لئے 4 رکنی ٹیم بھی بنا دی گئی ہے جس میں گریڈ 20 اور21 کے 4 آفیسرشامل ہیں۔

دوسری جانب وزیراعظم نوازشریف نے ٹرین حادثے پردکھ کا اظہارکرتے ہوئے پنجاب حکومت اورمتعلقہ اداروں کو تمام وسائل بروئےکار لانے کی ہدایت کی ہے۔ کورکمانڈر گوجرانوالہ، وزیرداخلہ پنجاب، وزیرریلوے خواجہ سعد رفیق سمیت دیگر حکام بھی جائے حادثہ پہنچ گئے۔





Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *